اداریہ

الحمد للہ اولا ً واخراً والصلوٰۃ والسلام علی نبینا محمد دائما ووافرا وعلیٰ الہ وصحبہ اجمعین

جامعہ قرطبہ کلفٹن کراچی ایک غیر معروف   ادارہ ہے جس نے خاموشی کے ساتھ بغیر کسی اشتہاراور نام و نمود کے فقط اللہ کے نام اوربھروسے سے سفر شروع کیا ،جو کہ  استخارہ اور اکابرین کے ساتھ طویل مشاورت کے بعدمختصر مدت میں مختلف میدانوں میں بحمد اللہ کافی حد تک قابل تقلید سفر طے  کر چکا ہے جو کہ تا حال جاری ہے۔

جامعہ قرطبہ میں  اس وقت مختلف خدمات   انجام دے رہا ہے جن میں :

1۔تعلیم و تدریس کے ساتھ ساتھ تربیت پر توجہ

2۔جامعہ  میں زیر تعلیم طلبہ کے علاوہ عوام اور اہل علاقہ کی تعلیم و   تربیت کا انتظام

3۔بنین و رجال کے ساتھ ساتھ بنات و خواتین کی تعلیم و تربیت پر توجہ

4۔تعلیمی و تربیتی امور کے ساتھ فلاحی اور عوامی منصوبوں پر کام

5۔جامعہ کے دائرے میں طلبہ کی تعلیم و تربیت کے ساتھ تعطیلات میں ایک  منظم مشن کے لیے طلبہ کی مصروفیت

6۔طلبہ کو تعلیم کے ساتھ ساتھ عربی،اردواور انگریزی زبانوں  خطبات پر عبور

7۔دارالافتاء میں  تحریری اور زبانی فتاویٰ کے علاوہ  فقہی کونسل کا قیام تاکہ تحکیم کے نظام کو عام  کیا جاسکے

8۔تخصص  کا شعبہ اور مفتیان کرام کی تیاری

9۔جامعہ میں حفاظ اور اسکول  میں میٹرک تک معیاری تعلیم

10۔تصنیف و تحقیق کا شعبہ جس میں سیرت النبی ﷺ،تفسیر اور دیگر بہت سے موضوعات پر تحقیقی کام

11۔مکتبہ جامعہ(لائبریری) جس میں طلبہ  اساتذہ کے علاوہ اہل علاقہ کے لیے مطالعہ کا انتظام

12۔طلبہ کی صحت مندانہ سرگرمیوں کے لیے فٹ بال گراونڈ کا انتظام

13۔”طلبہ ٹرسٹ” جس میں طلبہ مختلف سرگرمیوں کے تحت اپنے ساتھیوں کی طبی اور دیگر ضروریات کی کفالت کرتے ہیں

  ان تمام شعبہ جات کی مزید تفصیل  متعلقہ نگران اپنے مضامین میں تحریر کریں گے۔  

مجلہ قرطبہ اور شعبہ صحافت کا  قیام 

اس شعبے کا قیام  اس لیے ناگزیر سمجھا گیا کیونکہ صحافت اپنے پیغام و دعوت کو عمدہ اسلوب میں پیش کرنے کا ایک  خوب صورت میدان ہے ،چنانچہ اللہ رب العزت قرآن کریم میں ارشاد فرماتے ہیں ان ھذا لفی الصحف الاولیٰ صحف ابراھیم و موسیٰ

قرآن کریم پر مصحف کا اطلاق ہوتا ہے اور قرآن کریم تمام کتب اور صحف سماویہ کا جامع ہے ، اسی طرح  فن صحافت کی اصطلاح اسی صحف سے اخذ کردہ ہے۔

 جامعہ  قرطبہ کے اساتذہ نے باہمی مشورے سے طے کیا ہے کہ جامعہ کے تمام شعبہ جات کے تعارف اور جامعہ کے پیغام کو دعوتی خطوط پر عام کرنے کے لیے ایک مجلے کا اجراء کیا جائے  ،تاکہ جامعہ قرطبہ کے مشن کو ایک ترجمان اور زبان میسر آجائے۔

اغراض و مقاصد

اس مجلے کے اغراض و مقاصد درج ذیل ہیں :

1۔دین ِ حنیف  کی دعوت عام

2۔ائمہ مساجد اور منبر و محراب کے تقاضے  اور عوام کی دینی ضرورت کو پورا کرنا

3۔ائمہ کرام "قلب الرحیcentral point  کا کردار ادا کرسکیں

4۔مساجد معاشرے میں  "مسجد نبویﷺ” کا کردار ادا کرسکیں

5۔اہل مدارس صرف مدارس کی چار دیواری تک محدود نہ رہیں 

6۔اہل مدارس کا مسجد مدرسہ سے بڑھ ہر شعبہ زندگی کے عام و خاص افراد کے ساتھ مربوط رہنا 

7۔ ائمہ مساجد  کو خطبات،دروس اور  اہم فقہی مسائل کی فراہمی کا معمول

8۔ائمہ مساجد و مدارس کے کردار اور شخصیت کو مزید  موثر کرنا

             مجلہ اس  دعا کے ساتھ اس میدان میں قدم رکھ رہا ہے  کہ آغاز و انجام دونوں بابرکت رہیں انما الاعمال بالنیات و انما الاعمال بالخواتیم

دعا ہے کہ جامعہ نے جس طرح دیگر شعبہ جات میں اللہ کے فضل سے کامیابی پائی ہے ، مجلے کا آغاز بھی ایسا ہی رہے۔ وما ذلک علی اللہ بعزیزاللہ تعالیٰ سے دعا ہے ھٰذہ  بضاعۃ مضجاۃ   فاوف لنا الکیل و تصدق علینا۔